اہم خبریںپاکستان

کیا نئی حکومت سوشل میڈیا پر پابندی لگانے پر غور کر رہی ہے؟

0
0

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نئی بننے والی حکومت ملک میں تمام سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر مکمل پابندی عائد کرنے پر غور کر رہی ہے۔

نجی ویب سائٹ کے مطابق جمعرات 14 اپریل کو سینئر صحافیوں سے ملاقات کے دوران وزیر اعظم شہباز شریف نے اس بات کا اعادہ کیا مسلم لیگ ن کی حکومت میڈیا انڈسٹری کو نقصان پہنچانے والا کوئی قانون نافذ نہیں کرے گی۔

وزیر اعظم نے دعویٰ کیا کہ سوشل میڈیا پوری دنیا کی حکومتوں کو پریشان کر رہا ہے اور پاکستان بھی اس سے مختلف نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ حکومت پاکستان میں سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کو لگام ڈالنے کے طریقوں پر غور کرے گی۔

اس کے علاوہ، وزیر اعظم شہباز نے افسوس کا اظہار کیا کہ ریاستی اداروں کو بھی غیر ضروری تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے، عوام کو ریاستی اداروں کے خلاف توہین آمیز ٹرینڈز چلانے سے خبردار کیا جاتا ہے۔

یہ پیشرفت اس وقت سامنے آئی ہے جب سوشل میڈیا صارفین نے نئی بننے والی حکومت کے خلاف بھڑکانے والے ٹرینڈز کو ترک کرنے سے انکار کر دیا ہے، جس کے لیے تنقید کا مقابلہ کرنا مشکل ہو رہا ہے۔

انہوں نے سابق وزیراعظم عمران خان پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کو 8، 9 کروڑ روپے کی گھڑی ملی تھی وہ دبئی میں بیچ دی، ایک ہار تھا، سولہ کروڑ روپے کی ایک انگوٹھی تھی جو انہوں نے فروخت کردی، ہم کوئی انتقامی کارروائی نہیں کریں گے، قانون اپنا راستہ اپنائے گا۔

0
0

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Related Articles

Back to top button