اہم خبریںدنیا بینرپورٹ

مفہوم بدلنے سے کب انجام بدلے گا – تم ہمارا نام بدلو وہ تمھارا نام بدلے گا

12
0

بھارت جب بمبئ کو ممبئ کلکتہ کو کولکتہ بنارس کو ویناراسی اور آلٰہ آباد کو پریاگراج کررہا ہے حتی کہ اورنگآباد جیسے علاقوں اور ایبک روڈ تک کو بخشے کو تیار نہیں ہے اور سمجھتا ہے کہ ہندوتا کے اس دور میں مسلمان اور مغل آثار کو ختم کیا جائے ۔ جب مسجدیں گرا کر مندر بنائے جارہے ہیں جب مسلمانوں کو دیوار سے لگایا جارہا ہے جب مسلمان عورتوں کی نیلامی انٹرنیٹ پر حکومتی سرپرستی میں ہورہی اسی وقت قدرت اپنا عجیب کھیل جاری رکھے ہوئے ہے اور اب شومئ قسمت بھارت کے علاقوں کے چینی نام رکھے جارہے ہیں بلکہ اب تو پورے بھارتی صوبے اروناچل پردیش کو چین نے اپنا حصہ بتاتے ہوئے اس کا نام “ذاگنان” رکھ دیا ہے جس کا مطلب جنوبی تبت ہے جسے چین اپنا علاقہ مانتا ہے۔ واضع رہے کہ چین پہلے ہی کچھ علاقے بھارت کے چھین چکا ہے جس میں دیپسانگ اور پینگونگ وادی شامل ہیں۔
تاریخ کے حقائق سے سبق نہ سیکھنے والی بھارتی حکومت کو وہ سب کچھ بھگتنا پڑ رہا ہے جو وہ خود کرتی رہی ہے اور اب ڈر ہے یہ خلفشار اور تناو بڑھتا جائے گا اور اندرونی مسائل کے ساتھ ساتھ اب بیرونی محاذ پر بھی چین جیسے طاقتور ھمسائے سے روز بروز کشیدگی بڑھتی جارہی ہے ۔

مفہوم بدلنے سے کب انجام بدلے گا

تم ہمارا نام بدلو وہ تمھارا نام بدلے گا

اقبالیاتِ ظفر | Facebook

12
0

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Related Articles

Back to top button