حلقہ فکروفن

ممکن نہیں فراغ ان سے

(اقبالیاتِ ظفر)

3
0

پیر اگر آسماں اور زمیں کی طرف سَرکرلو

فلق خاک پہ سینچو یا آسمان پہ گھر کرلو

اقبال جرم کرلو یا خوب عداوت ظفر کرلو

ستاروں پہ کمند ڈالو ،چاند تک سفر کرلو

جو بتایا وہ سب بھی نیازو نظر کرلو

سارے رازوں کی بھی ان کو خبر کرلو

قرآن کہتا ہے کہ ممکن نہیں فراغ ان سے

تم ساری دنیا چاہے ادھر سے ادھر کرلو

(اقبالیاتِ ظفر)

3
0

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Related Articles

Back to top button